رمضان میں افطاری کے وقت روزانہ اللہ کا یہ نام ستر مر تبہ پڑھتی تھی کہ اللہ نے خزانہِ غیب سے رشتہ بھیجا۔

عموماً پسند کی شادی میں وقتی جذبات محرک بنتے ہیں، وقت کے ساتھ ساتھ ان جذبات اور پسندیدگی میں کمی آنے لگتی ہے، نتیجۃً ایسی شادیاں ناکام ہوجاتی ہیں اورعلیحدگی کی نوبت آجاتی ہے، جب کہ اس کے مقابلے میں خاندانوں اوررشتوں کی جانچ پرکھ کا تجربہ رکھنے والے والدین اورخاندان کے بزرگوں کے کرائے ہوئے رشتے زیادہ پائیدارثابت ہوتے ہیں۔ اوربالعموم شریف گھرانوں کا یہی طریقہ کارہے، ایسے رشتوں میں وقتی ناپسندیدگی عموماً گہری پسند میں بدل جایا کرتی ہے۔

اس لیے مسلمان بچوں اوربچیوں کوچاہیے کہ وہ اپنے ذمہ کوئی بوجھ اٹھانےکے بجائے اپنےبڑوں پراعتماد کریں، ان کی رضامندی کے بغیر کوئی قدم نہ اٹھائیں۔البتہ عاقل بالغ مرد اورعورت کو شریعت نے یہ حق دیاہے کہ اپنی پسند اورمرضی سے نکاح کرے ؛ اس لیے والدین کو چاہیے کہ وہ اولاد کی چاہت معلوم کرکے اس کا لحاظ رکھیں ۔بہرحال والدین کو مناسب طریقے سے اپنی چاہت بتانے کے ساتھ اللہ تبارک وتعالیٰ سے دعا واستخارہ جاری رکھیں، اور “یَا وَدُودُ ” کثرت سے پڑھیںاکثر طور پہ آج کل نوجوان لڑکے لڑکیوں کی خواہش ہوتی ہے۔

کے ان کے معیار اور پسند پر ان کی شادی ہو جاۓیہ بات کوئی خلاف عادت یا قابل مذمت نہیں ہے اگر دونوں طرف سے باہمی رضامندی سے ممکن ہو جاۓلیکن اس معاملہ میں کچھ بات ٹهیک طرع سے نہ بن پا رہی ہو یا کوئی شخص ان دونوں جانبین کے اس کام کو خراب کرنے کی اندرونی چال چل رہا ہو یا کچھ اختلافات پيدا ہو جانے کی وجہ سے بات ذیادہ بڑھ رہی ہو طرف خرابی کے یا معاملہ طے نہ پا رہا ہو توآج میں اس کے حل کیلے ایک قرآنی وظائف کا عمل آپ کو بتا رہا ہوںاگرچہ بعض اوقات رشتے ناطے کے معاملات کسی دوسری وجہ سے حل نہیں ہو پاتے۔

اور لڑکے یا لڑکی کو ان کا خیال تک نہیں ہوتا اور عمر بیت جاتی ہے جیسے جادو بندش کا عمل کوئی بدبخت انسان کرواتا ہے جس سے شادی نکاح روک جاتے ہیں بہر کیف اگر ایسا مسئلہ ہو تو آپکو مجھ سے رابطہ کرنا بہتر رہیگا. عمل یہ ہےسورہ آل عمران کی آیت نمبر73تا74روزانہ رات کو یا سحری کیوقت ایک سو چوراسی 184 مرتبہ ننگے سر کهلے آسمان تلے 14 دن مسلسل باوضو پڑھ ليا کریں اور اپنے لئے دعا مانگ کر آسمان کیطرف پهونک دی

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.