عید پر پارلر نہیں جانا اور پیسے بچانا

قدرتی طور پر ہر عورت کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ خوبصورت دکھائی دے آئےاس کو دیکھ ہر کوئی اس کی تعریف کرے اور اس کے شوہر کی نظر اس سے ہٹ نہ جائے اس کے لیےطرح کی جتن کئے جاتے ہیں مختلف کریمیں استعمال کی جاتی ہے جن کے استعمال سے وقتی طور پر تو چہرے کی خوبصورتی ان سے بڑھ جاتی ہے لیکن مستقبل میں اس کے مضر اثرات واضح طور پر بھی دکھائی دینے لگتے ہیں چہرے پر داغ دھبے دانے کیل مہاسے ان کریموں اور ادویات کی وجہ سے سے پیدا ہونے لگ جاتے ہیں کچھ خواتین فوری حسن کو نکھارنے کے لیے بیوٹی پارلر کا رخ کرتی ہے ہے جو وقتی طور پر تو ایک اچھا نسخہ ہے اور ایک اچھی ترتیب ہے کہ جس کی وجہ سے خواتین کے حسن میں اضافہ وقت پر ہو جاتا ہے لیکن اگر آپ مسلسل بیوٹی پالر کا رخ کیاجائے تو اس کی وجہ سے نہ صرف آپ کے اخراجات زیادہ ہوں گے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ بیوٹی پالر میں استعمال ہونے والے مختلف طرح کی کریمیں بھی اثرات کرتے ہیں جو بازار میں موجود کریموں کے ہوتے ہیں اس لیے آپ کی خوبصورتی کو نکھارنے کے لئے لئے دیسی اشیاء استعمال کرنی چاہئے

کہ جن کے مضر صحت اثرات نہیں ہوتےاور اس کی وجہ سے پیدا ہونے والی خوبصورتی بھی دیرپا ہوتی ہے ہے دودھ کی مثال لیجیے ماہرین کے مطابق دودھ پینا انسان کے جسم کے لئے فائدہ مند ہے ایسے ہی اس کے لگانے کے اثرات سے بھی کوئی انکار نہیں کرسکتا اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کا چہرہ صاف ہوجلد نرم اور ملائم ہو اور سانولا رنگ بھی چمکتا ہوا دکھائی دے دے تو دودھ لے لیجئے اور ایک روئی کے ٹکڑے کی مدد سے اپنے چہرے پر اچھی طرح لگا کر اس کا مساج کرے اور پھر اس کے نتائج دیکھیں اس کے علاوہ مختلف طرح کے ٹوٹکے ہیں جن میں سے کچھ کا تعلق دودھ سےہے اور کچھ باقی قدرتی اشیاء سے ہیں۔خوبصورت چہرہ اللہ سبحانہ وتعالی کی نعمتوں میں سے ایک بڑی نعمت ہے۔ایسے چہرے جو خوبصورت ہوں لوگ فطرتا ان کی طرف مائل ہوتے ہیں۔ان سے ملاقات اور گفتگو کر کے خوش ہوتے ہیں۔ان کے پاس بیٹھنا دلی سکون کا باعث بنتا ہے۔خوبصورت چہرے میں اللہ سبحانہ وتعالی نے ایسی کشش رکھی ہ

کی لوگ خود بخود اسکی محبت میں مگن ہو جاتے ہیں۔دل بہانے تلاش کرتا ہے اس خوبرو کو ملنے کے۔میں ایک کتاب کے مطالعہ میں مصروف تھا تو ایک حدیث پڑھ کر چونک گیا کہ میرے پیارے نبی کیا ہی فطرت شناس تھے۔امام احمد نے فضائل الصحابہ میں ایک حدیث روایت کی ہے جسکی راویہ سیدہ عائشہ صدیقہ ام المؤمنین سلام اللہ علیھا ہیں۔آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا: اطلبوا الحوائج عند حسان الوجوہ۔ترجمہ۔اپنی ضرورتیں خوبصورت چہرے والوں سے طلب کرو۔خلیفہ دوئم سیدنا فاروق اعظم رضی اللہ تعالی عنہ کے بارے میں میں نے پڑھا ہے کہ آپ کبھی بدصورت اور برے نام والوں کو کام کا نہیں فرماتے تھے۔ایک دفعہ بوری اٹھوانے کے لیے راہ گیر کو آواز دی جب وہ قریب آیا تو پوچھا تیرا نام کیا ہے وہ کہنے لگا میرا نام ظالم ہے۔فرمایا باپ کا؟ کہنے لگا سارق ہے۔حضرت نے اس سے بوری نہیں اٹھوائ اور فرمایا۔جاؤ تم ظلم کرو اور تمہارا باپ چوری کرے مجھے تمہاری مدد کی ضرورت نہیں ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *