پتلا تیلے جیسا انسان یہ کھا کر موٹا صحت مند ہوگیا

آپ لوگ اس ریسیپی سے اپنی باڈی کو ہیلدی کر سکتے ہیں یعنی بھرا بھرا چہرہ ہوگا بھرا بھرا جسم ہوگا یعنی آپ کسی جگہ سے کمزور نہیں آئیں گے ۔ یہ ایک پاؤڈر ہے پروٹین پاؤڈر ہے جو آپ بازار سے لیتے ہیں تو دس ہزار بیس ہزار کا ایک ڈبہ ملتا ہے وہ اس میں کیمیکل بھی شامل ہوتا ہے اس پروڈکٹ میں کیمیکل شامل نہیں ہے آج ہم ٹوٹل نیچرلی ایک پروٹین بنائیں گے جو آپ لوگ کم سے کم عمر بچے کو بھی دے سکتے ہیں حتی کہ ایک سال کے بچے کو بھی استعمال کراس سکتے ہیں سب سے پہلے آپ نے لینا ہے کاجو یہ آپ لوگوں کو کسی بھی جگہ سے باآسانی مل جائے گا آدھ پاؤ کے قریب کاجو لے لیجئے اور آدھ پاؤ کے قریب ہی اخروٹ کی گریاں لے لیجئے تیسرے نمبر پر آدھ پاؤ پستہ لے لینا ہے یہ بھی آپ کو آسانی سے مل جائے گا اور آخر میں آپ لوگوں نے لینے ہیں بادام جو کہ آدھ پاؤ ہی لینے ہیں جو کہ اس ریمیڈی کا بہت ہی خاص جزو ہیں اب دوسرا سٹیپ یہ ہے کہ سب سے پہلے باداموں کو تھوڑا سا بھون لیجئے

تا کہ ان کے اندر سے نمی ختم ہوجائے یہاں تک کہ ہلکا ہلکا سا جب دھواں ان میں سے اٹھے گا تو سمجھ جائیے کہ ان کی نمی خشک ہوچکی ہے اور پھر ان باداموں کو اتار لیجئے اور اسی طرح کاجو اخروٹ وغیرہ کی بھی نمی کو ختم کر لیجئے اور پھر ان تمام چیزوں کو اچھی طرح پیس کر ایک پاؤڈر تیار کرلیجئے اور پھر اس کو کسی چیز میں محفوظ کر لیجئے اور روزانہ ایک چمچ ناشتے سے ایک گھنٹہ پہلے استعمال کیجئے ہوسکے تو ایک چمچ شہد بھی اس کے ساتھ ساتھ لے لیجئے ۔جو حضرات صبح ناشتہ نہیں کرپاتے ہیں انہیں چاہیے کہ بادام کا استعمال کریں، گھر سے نکلتے ہوئے چند گری بادام جیب میں ڈال لیں اور راستے میں کھاتے جائیں، امریکی ماہرین کہتے ہیں کہ یہ صحت کے لیے مفید ہے۔کیلیفورنیا یونیورسٹی میں حال ہی میں ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق بادام میں بھرپورغذائیت پائی جاتی ہے، اس میں چکنائی، پروٹین، وٹامن ای اور میگنیشئیم وافر مقدار میں موجود ہے

جو جسم کو کمزور نہیں ہونے دیتے۔بادام کھانے سے بھوک مٹ جاتی ہے، بلڈ پریشر اور کولیسٹرول کنٹرول رہتا ہے اور ساتھ ہی وزن میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔یونیورسٹی میں کی گئی اس تحقیق میں نوجوان طلبا کے دو گروپ بنائے گئے، ایک گروپ میں 30 اور دوسرے میں 35 طلبا کو رکھا گیا۔پہلے گروپ کو 8 ہفتوں تک روزانہ ناشتے میں صرف 56 گرام بادام دیے گئے جن سے 320 کیلوریز ملتی ہیں جبکہ دوسرے گروپ کو اسنیک کھانے کا کہا گیا جو 338 کیلوریز کے برابر ہوں۔آٹھ ہفتے ان طلبا کو قریب سے مانیٹر کیا گیا اور آخرکار یہ بات سامنے آئی کہ اسنیکس کھانے والے طلباء کے مقابلے میں بادام کھانے والے طلباء میں ذیابیطس اور بلڈ پریشر متوازن رہا۔اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔آمین

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *