انگلیوں پر سات بار یہ سورۃ پڑ ھ کر معجزہ دیکھیں

آپ کو ایسا وظیفہ بتائیں گے جس سے سفید بال کالے ہو جائیں گے۔ جن بہن بھائیوں کے بال وقت سے پہلے سفید ہو جاتے ہیں وہ یہ وظیفہ ضرور کر یں بغیر کسی دوائی اور کلر کے قدرتی طور پر بال پورے کے پورے کالے ہو جائیں گے آج کل اکثر ا یسا دیکھا گیا ہے کہ لڑ کیاں کلر لگاتی ہیں پالر میں جاتی ہیں اور اکثر خواتین اس وجہ سے پریشان ہیں کہ وقت سے پہلے ان کے کالے بال سفید ہو چکے ہیں تو وہ یہ وظیفہ ضرور کریں بال کالے کر نے کے لیے جو دوائیاں استعمال کی جاتی ہیں ان کا خاص فائدہ نہیں ہوتا آج جو عمل آپ کو بتانے جا رہی ہوں وہ بہت ہی فائدہ مند ہے۔

عمل بتانے سے پہلے ایک گزارش ہے کہ میری باتوں کو بہت ہی زیادہ غور سے سنیے گا تا کہ میری ہر بات آپ کو اچھے سے سمجھ آ سکے ۔ عمل آپ نے اس طرح کر نا ہے کہ سورۃ الیل سورۃ الیل جو تیسرے پارے میں ہے یہ آپ نے سات مرتبہ پڑ ھنی ہے باوضو ہو کر پڑ ھنی ہے باوضو پڑ ھنے سے اس کی بر اکات میں اضافہ ہو جاتا ہے پھر زیتون کا تیل لینا ہے جو بڑ ی بوتل سورۃ الیل آپ نے سات مرتبہ پڑ ھنی ہے اور بوتل پر دم کر دینا ہے۔ سات مرتبہ سورۃ الیل پڑ ھ کر زیتون کے تیل پر دم کر کے انگلیاں بالوں میں پھیرنی ہیں۔ یہ مالش کم از کم آپ نے پانچ منٹ تک کرنی ہے اور روزانہ جب تیل لگانا ہے تو پہلے سات مرتبہ سورۃ الیل پڑ ھ کے اس تیل پر دم کر نا ہے ۔

یہ عمل دن یا رات میں کسی وقت بھی آپ کر سکتے ہیں اور یہ عمل آپ نے اکیس دن تک بلا نا غہ کر نا ہے یہ عمل مرد اور خواتین دونوں کر سکتے ہیں اکیس دن یہ عمل کر نے کے بعد آپ دیکھیں گے کہ سفید بال سیاہ ہونا شروع ہو چکا ہوں گے یہ بہت ہی آ زمودہ عمل ہے آپ اگر ہمارے بتائے ہوئے طریقے سے عمل کریں گے تو انشاء اللہ ضرور فائدہ ہوگا۔ اللہ کے فضل و کرم سے آپ کے بال سفید سے نہایت ہی کالے ہو جائیں گے اور بہت ہی زیادہ کا لے ہو جائیں گے کہ آپ حیران رہ جائیں گے۔

ہر وظیفہ انسان کی بہتری ہر عمل انسان کی بہتری کے لیے ہی ہوتا ہے مگر انسان ان عملیات پر یقین نہیں کر تا جو کہ بہت غلط بات ہے یقین ہی وہ واحد ہتھیار ہے جس کی وجہ سے نا ممکن بھی ممکن ہو سکتا ہے۔ تو کوئی بھی عمل یا وظیفہ کر نے سے پہلے یقین کا ہونا لازمی ہے۔ تو یقین کے ساتھ اس عمل کو کیجئے گا۔ انشاء اللہ ضرور فائدہ ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *