جمعرات بھری مراد کی پہلی جمعرات یہ آسان عمل کرلیں

قمری سال کا آخری مہینہ ذی الحج حرمت والے مہینوں میں سے ایک ہے ۔ قرآن مجید فرقان حمید میں اللہ تبارک وتعالیٰ نے دس راتوں کی قسم کھائی ہے ” قسم ہے فجر کی، اور دس راتوں کی”۔ مفسرین کے مطابق ان دس راتوں سے مراد ذی الحج کی پہلی دس راتیں ہیں۔آج کا وظیفہ ہمار ا ذوالحجہ کی پہلی جمعرات کے حوالے سے ہے۔ انشاءاللہ آپ خود بھی کریں ۔ اور دوسروں کے ساتھ بھی شئیر کریے گا۔ اور اس کو زیادہ سے زیادہ لوگ کرکے اپنی حاجتیں منوا سکیں۔ اپنی ضرورتوں کو پورا فرماسکیں۔ اپنی مشکلوں میں اللہ پاک سے سوال کریں۔ اور اللہ تبارک وتعالیٰ ان کو عطا فرما سکیں۔ وظیفہ کچھ یوں ہے کہ جو بھی ذوالحجہ کی پہلی جمعرات کو ، دو رکعات نفل اس طرح سے پڑھتا ہے

کہ ہررکعت کے بعد سورت الفاتحہ پڑھنے کے بعد ایک مرتبہ سورت الکو ثر اور ایک مرتبہ سورت اخلاص پڑھیں۔ یہ نہایت ہی آسان وظیفہ ہے۔ الحمد شریف پڑھنے کے بعد ایک مرتبہ سورت الکو ثر اور ایک مرتبہ سورت اخلاص پڑھنی ہے۔ دونوں رکعتوں میں اسی طرح سے پڑھنی ہے۔ اس کے بعد انشاءاللہ! آپ نے اللہ پاک سے جو بھی مانگنا ہے۔ نماز اادا کرنے کے بعد ، آپ نے اللہ پاک سے جو بھی مانگنا ہے۔ اللہ تبارک وتعالیٰ آپ کو ضرور عطا فرمائیں گے۔ یہ ایک نایاب ہی موقعہ اللہ پا ک نے ہمیں دیا ہے۔ اللہ پا ک فرماتےہیں کہ مجھے ان دس دنو ں کی عبادت سے زیادہ کوئی عبادت پسند نہیں ہے۔ پسند عبادتیں تو ساری ہیں ۔ لیکن سب سے زیادہ افضل عبادت ان دس دنوں کو دیا ہے۔

آپ عبادتوں سے اللہ پاک سے سوا ل بھی کیجیے۔ اپنی مشکلات کا حل بھی لیجیے۔ اوراللہ پاک کی عبادت کرکے اپنے درجات کو بھی بلند کیجیے۔ دوسروں کے ساتھ شئیر کریں تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ اس سے فائدہ حاصل کرسکیں۔ دعا کرتے ہیں اللہ تبارک وتعالیٰ آپ کو آسانیاں عطافرمائے۔ اور آسانیاں تقسیم کرنے کا شرف بھی عطافرمائے۔ حدیث میں خاتم النبیین محمد ﷺ کا ارشاد گرامی ہے کہ: ” دنیا کے افضل ترین دن ایام (یعنی ذوالحجہ کے دس دن) ہیں۔ ” صحابہ کرام رضی اللہ عنہم نے عرض کیا”کیااللہ کے راستے میں جہاد بھی فرمایا:نہیں ، جہاد فی سبیل اللہ بھی نہیں۔ سوائے اس شخص کے جو اپنی جان ومال کے ساتھ نکلا اور ان میں سے کسی چیز کے ساتھ واپس نہ لوٹا”۔ حج جیسی عظیم عبادت کا رکن اعظم یوم عرفہ بھی انہی ایا م میں ہے۔ اسی مناسبت سے اس مہینے کا نام ذوالحجہ ہے یعنی حج والا مہینہ ہے نبی کریم ﷺ کا فرمان ہے کہ ” جس شخص نے اللہ کے گھر کا حج کیا اور بے ہودگی و فسق سے بچارہا تو اس حالت میں لوٹے گا جیسے آج ہی ماں کے بطن سے پیدا ہوا ہو”۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *