رات کو سوتے وقت ادرک کا ٹکڑا تکیے کے نیچے رکھ کر سوجائیں جادوئی فائدہ ہوگا

ادرک کو زمانہ قدیم سے خوراک کو لذیذ بنانے اور علاج کیلئے استعمال کیا جارہا ہے ادرک ہماری زندگی میں اہم کردار ہے ۔ ادرک کا شمار قدرت کی ان نعمتوں میں ہوتا ہے جو صرف ہمارے کھانوں کو ہی پر لطف نہیں بناتی ہے بلکہ طرح طرح کی بیماریوں سے بھی بچاتی ہیں۔ ماہرین کہتے ہیں کہ ادرک کا استعمال سات ہزار سال سے جاری ہے ۔ کھانے کے علاوہ ہربل ادویات کی تیار ی میں بھی اس کا استعمال عام پایا جاتا ہے ۔ ادرک جسم میں گرمی پیدا کرتا ہے خوراک کو ہضم کرنے میں مدد گار ہے پیٹ کو نرم کرتا اور قبض کو رفع کرتا ہے ۔

پیٹ اور جگر سے پرانے سدے نکال دیتا ہے ۔ سکیب اور بادی اشیاء سے پیدا ہونے والی تبخیر کو دور کرتا ہے ۔ آنتوں سے غلیظ مادے اور گندی ہوا نکالتا ہے ۔ مقوی باہ ہے اگر آنکھوں میں سوزش ہے اور سوزش کیوجہ سے نظر میں فرق یا کمی آگئی ہے ہو تو ادرک کے پانی میںسلائی ڈال کر آنکھوں میں پھیری جاتی ہے نزلہ زکا م کھانسی دمہ بلغمی کھانسی لقوہ فالج وغیرہ میں مفید ثابت ہوا ہے ۔ اگر معدہ مسلسل خرابی کیوجہ سے سست پڑ گیا ہو بھوک کم اور دیر سے لگتی ہو اور کھانا ہضم نہ ہوتا ہو تو ان سب کیلئے ادرک مفید ثابت ہوتا ہے ادرک کے استعما ل سے منہ اور سانس کی بدبو دور ہوتی ہے ۔ منہ کا خراب ذائقہ ٹھیک ہوتا ہے ۔ مکھن کے ہمراہ ادرک کھانے سے بلغم ختم ہوجاتی ہے ۔ ادرک معدہ اور دماغ کیلئے مقوی ہے ۔ بھوک کو بڑھاتا ہے حافظہ کی خرابی کو دور کرتا ہے

ادرک جسم سے غلیظ رطوبتوں کو نکالتا ہے ۔ دمہ کے مریضوں کو اس کے استعمال سے راحت ہوتی ہے ۔ ادرک پیس کر تیل میں ملا کر مالش کرنے سے پٹھوں کے درد ٹھیک ہوجاتے ہیں ۔ یہ خ و ن کی نالیوں پر جمی ہوئی چربی کی تہیں اتار دیتا ہے ۔ یہ دل کے فعل کو مضبوط کرکے دوران خ و ن میں سستی کیوجہ سے پیروں یا دوسرے مقامات پر جمع ہونے والے پانی کو نکال دیتا ہے ۔ ادرک چبانے سے گلا صاف ہوجاتا ہے ۔ ادرک کے پانی میں شہد ملا کر دن میں بار بار چاٹنے سے شوگر کے مرض میں فائدہ ہوتا ہے ۔ ادرک کا مربہ بھی استعمال کیا جاتا ہے ۔ اگر ادرک کو سہی ضرورت اور فائدے کیلئے استعمال کیا جائے تو بہت سے فوائد حاصل ہوتے ہیں ۔ادرک روزانہ اور مقدار سے زیادہ استعمال نہیں کرنا چاہیے ۔ ادرک کا ٹکڑا سراہنے کے نیچے رکھ کر سونے سے کیا فوائد حاصل ہوتے ہیں۔

ادرک کو سراہنے کے نیچے رکھ کر سونے سے یہ سینے کی جلن کو ختم کرتا ہے سراہنے کے نیچے رکھنے سے یہ سانس کی جو بھی بیماریاں ہیں ا ن کو ختم کرتا ہے ۔ اچانک ہارٹ اٹیک سے محفوظ رکھتا ہے ۔ ادرک کو سراہنے کے نیچ رکھ کر سونے سے پرسکون نیند آئیگی ۔ ماہرین کا کہنا ہے نیند کے مسائل سے دوچار افراد کیلئے اس مصیبت سے چھٹکاراہ پانے کا آسان طریقہ یہ ہے کہ وہ سراہنے کے نیچے ادرک رکھ کر سوئیں اس کی خوشبو دماغ پر اثر انداز ہوتی ہے ۔طب نبوی حافظ ابو نعیم ؒ نے حضرت ابو سعید خدری ؓ سے ایک روایت نقل کی ہے شاہ رو م میں سونٹھ کی ایک ٹوکری آپﷺ کی خدمت میں بطور ہدیہ پیش کی تو آپﷺ نے سب کو ایک ایک ٹکڑا انایت کیا اور مجھے بھی ایک ٹکڑاکھلایا ۔سونٹھ بھی ادرک کو کہتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.