”صبح سحری کے بعد قرآن مجید کی یہ ایک آیت پڑھنے سے تمام بیماریاں جڑ سے ختم ہوجاتی ہیں آزما کر دیکھ لیں پیارے نبی کا یہ فرمان سن لیں ۔“

السلام علیکم ۔۔۔اسلامک لیڈرکےپیارے دوستو ۔ بہت سے لوگ آج کل موذی بیماریوں میں مبتلا ہیں کسی کو بلڈ پریشر کی بیماری ہے کوئی کینسر کی بیماری میں مبتلا ہے ۔ اسی طرح ہر بندہ اپنی کسی نہ کسی بیماری کی وجہ سے پریشان ہے ۔ اور بیماری کی وجہ سے ضروریات زندگی اور کام کاج کرنے سے بھی محروم رہتے ہیں ۔ دوستوکسی بھی قسم کی بیماری ہو ،اسکا علاج کرنا سنت ہے اور علاج سے کبھی گریز نہیں کرنا چاہئے ۔بحثیت مسلمان ہمارا ایمان ہے کہ بیماریاں اللہ کی جانب سے امتحان و آزمائش ہیں جن کا علاج ادویہ سے کرنا چاہئے تو سنت کے مطابق ان کا روحانی علاج کرنا بھی جائز اور مستحب عمل ہے۔ اللہ کا وعدہ ہے کہ بیماریوں سے شفا بھی اسی کی جانب سے ملتی ہے۔اس کے لئے بندے کو اپنے ربّ سے ایسے طریقہ سے دعا کرنی چاہئے کہ دوا میں تاثیر پیداہو جائے ۔

تو میں آج آپ کو نہایت ہی باکمال وظیفہ بتانے جا رہا ہوں ، یعنی صبح سحری کے بعد قرآن مجید کی صرف ایک مختصر سی آیت پڑھنی ہے۔ اس مختصر سی آیت سے تمام بیماریاں جڑ سے ختم ہوجاتی ہیں آزما کر دیکھ لیں ، آپ کی ہر قسم کی بیماری ختم ہوجائے گی اور ایسی بیماری بھی ہمیشہ کے لیئے ختم ہوجائے گی جو ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہی تھی ۔ آپ سےبس درخواست ہے ہماری آج کی اس ویڈیو کو آخر تک ضرور دیکھیے گا تاکہ آپ کی بہتر طور پہ راہنمائی ہوسکےاور اگرآپ اسلامک لیڈر کی ویڈیو پہلی بار دیکھ رہے ہیں اور ابھی تک آپ نے ہمارا چینل سبسکرائب نہیں کیا ہوا تو سب سے پہلے ہمارا چینل ضرور سبسکرائب کر لیجئے اور ساتھ ہی لگے بیل بٹن کو بھی پریس کر لیں تاکہ آپ کو ہماری اپلوڈ ہونے والی مزید معلوماتی ویڈیوز کا نوٹیفکشن ملتا رہے۔ عزیز خواتین وحضرات۔۔۔ اللہ نے انسان کو بنیادی طور پر اپنی عبادت کے لیے پیدا کیا۔ اس مقصد کو پورا کرنے کے لیے اس کا صحت مند ہونا ضروری ہے۔ بسا اوقات انسان کی صحت کو کچھ ایسے عوارض لاحق ہوجاتے ہیں جس سے اس کی صحت متاثر ہوجاتی ہے۔ بیماری کسی بھی قسم کی ہو اس کا علاج کروانا سنت نبوی ﷺ سے ثابت ہے اس سے غفلت نہیں برتنی چاہیے۔

جامع ترمذی کی ایک روایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین نے علاج معالجے کے بارے میں دریافت کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’ اللہ کے بندو تم علاج کرواؤ۔ بلاشبہ اللہ نے سوائے بڑھاپے کے کوئی ایسا مرض نہیں پیدا کیا جس کا علاج نا ہو‘‘۔بہت سے امراض ایسے ہیں جن کے بارے میں ہم یہ جانتے ہیں کہ وہ لا علاج ہیں مگر اس حدیث کے مطابق کوئی مرض لا علاج نہیں۔ ہم جن امراض کو لا علاج قرار دیتے ہیں دراصل وہ ہمارے محدود علم کے مطابق لا علاج ہوتے ہیں اس کا علاج اس کی دوا موجود ہے مگر ہماری دریافت ابھی اس تک نہیں پہنچی ہوتی۔ آج جن امراض کا علاج تشخیص ہوچکا گزشتہ دور میں انہیں بھی لا علاج سمجھا جاتا تھا تو جن امراض کو ہم لا علاج قرار دیتے ہیں آنے والے دور میں ان کا علاج ہونا کوئی بعید نہیں۔فرمان باری ہے ’’تمہیں بہت تھوڑا علم دیا گیا ہے‘‘۔

اسی طرح صحیح بخاری کی ایک روایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’ اللہ نے کوئی مرض بنا علاج نہیں پیدا کیا‘‘۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے بوقت ضرورت اپنا بھی علاج کروایا صحابہ کرام رضوان اللہ کا بھی کروایا۔ کچھ لوگ بوجہ توکل علاج سے گریز کرتے ہیں کہ اگر مقدر میں شفا ہے تو علاج کا کوئی فائدہ نہیں اور اگر شفا نہیں تب بھی علاج کا کیا فائدہ۔ توکل کا معنی یہ نہیں کہ اسباب ترک کردیے جائیں بلکہ اس سے مراد یہ ہے کہ اسباب ہی کو موثر حقیقی نا سمجھ لیا جائے بلکہ نظر فاعل حقیقی ہی پر رہنی چاہیے کہ اگر اللہ چاہے تو ا سے شفا ہوجائے گی ورنہ نہیں۔ جب انسان یہ عقیدہ رکھ لے گا اسباب محض اسباب ہیں اللہ کی منشا کے بغیر ان میں تاثیر نہیں آسکتی تو یہ توکل کے منافی نہیں ہے۔ لہذا معزز سامعین کرام سحری کے وقت اول و آخر تین بار درود ابراہیمی پڑھیں اور ان کلمات کوجو آپ کی سکرین پر دکھائی دے رہے ہیں،

اسی طرح صحیح بخاری کی ایک روایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’ اللہ نے کوئی مرض بنا علاج نہیں پیدا کیا‘‘۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے بوقت ضرورت اپنا بھی علاج کروایا صحابہ کرام رضوان اللہ کا بھی کروایا۔ کچھ لوگ بوجہ توکل علاج سے گریز کرتے ہیں کہ اگر مقدر میں شفا ہے تو علاج کا کوئی فائدہ نہیں اور اگر شفا نہیں تب بھی علاج کا کیا فائدہ۔ توکل کا معنی یہ نہیں کہ اسباب ترک کردیے جائیں بلکہ اس سے مراد یہ ہے کہ اسباب ہی کو موثر حقیقی نا سمجھ لیا جائے بلکہ نظر فاعل حقیقی ہی پر رہنی چاہیے کہ اگر اللہ چاہے تو ا سے شفا ہوجائے گی ورنہ نہیں۔ جب انسان یہ عقیدہ رکھ لے گا اسباب محض اسباب ہیں اللہ کی منشا کے بغیر ان میں تاثیر نہیں آسکتی تو یہ توکل کے منافی نہیں ہے۔ لہذا معزز سامعین کرام سحری کے وقت اول و آخر تین بار درود ابراہیمی پڑھیں اور ان کلمات کوجو آپ کی سکرین پر دکھائی دے رہے ہیں،

اس کے لیے نہ صرف طب نبویﷺ سے رہنمائی لی جاسکتی ہے بلکہ قرآن پاک میں بھی بے شمار مقامات پر ایسی چیزوں کا زکر ہے جن سے استفادہ کیا جاسکتا ہے۔ اسلام نے صحت اور تندرستی پر بہت زور دیا ہے۔ کھانے کے جتنے بھی طریقے ہیں ان کو اگر اسلامی احکامات کے مطابق اپنایا جائے تو شاید ہی کبھی کوئی بیماری ہوجائے۔ پھر جن چیزوں کے کھانے کا حکم دیا گیاان کو استعمال کیا جائے تو بھی کافی حدتک ہماری صحت ٹھیک رہ سکتی ہے۔دوستو ہم امید کرتے ہیں آپ کو ہماری آج کی یہ ویڈیو ضرور پسند آئی ہوگی۔ابھی ہی اس ویڈیو کو دوسروں تک شیئر کیجئے گاکیونکہ مخلوق خدا کی بے لوث خدمت کا جذبہ آپکی بگڑی بنا سکتا ہے۔ جلدی کریں نیکی میں دیر نہ کریں شاید آپ کا ایک عمل کسی کی کھوئی ہوئی زندگی واپس لوٹا دے۔اور اگر آپ ہمارے چینل اسلامک لیڈر کو سبسکرائیب کر چکے ہیں تو اپنی رائے سے ہمیں کمنٹس کے ذریعے ضرور آگاہ کیجئے گا۔کمنٹس میں آپ ہم تک اپنے سوالات بھی پہنچا سکتے ہیں۔ہمارے چینل کو اسی طرح دیکھتے رہیے۔۔۔۔ ہم پھر حاضر ہونگے ایک نئے ٹا پک کے ساتھ۔اپنا بہت سا خیال رکہیے گا، اسلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ۔۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.