ایک مرتبہ رسول اکرم ﷺ کےپاس مال غنیمت کی پانچ بکریاں آئیں، حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا نےآپﷺ سے فرمایا: اے اللہ کے رسول ﷺ گھر میں فقر وفاقہ ہے۔کچھ بکریاں مجھے بھی عطافرمائیں تو رسول اکرم ﷺ نے فرمایا: اے فاطمہ ! جب اللہ سے دعا مانگو تو پہلے یہ کلمات پڑھ لیا کرو یہ پانچ بکریوں سے بہتر ہیں۔ فرمایا یہ دعا پڑھو: “یا اول الا ولین یا اخر الاخرین یا ذالقوۃ المتین یاراحم المساکین یاارحم الراحمین” ۔ ترجمہ: اے اللہ ! سب سے اول ، اے سب سے آخر قوت وطاقت والے ، اے مسکینوں پر رحم کرنے والے ، اے رحم کرنے والوں میں سب سے زیادہ رحم کرنے والے ۔ان کلمات کو پڑھ کر اپنی حاجت اللہ سے مانگیں انشاءاللہ! ضرور پوری ہوگی۔ دوسرا وظیفہ :دنیا و آخرت کی تمام کامیابی کاراز نماز کی پابندی ہے۔ روحانی وظائف سے آپ سو فیصد نتیجہ حاصل کر سکتے ہیں۔ جب آپ سو فیصد نمازی بھی ہوں گے۔آپ کے تمام عملیات اور وظائف میں تبھی برکت آئی گی۔ جب آپ نماز کےساتھ عمل اوراپنے رب کریم سے دعا کواہتمام کے ساتھ مانگیں گے۔ دعا میں پورے وثوق اور یقین کے ساتھ اپنے اللہ سے بڑی سے بڑی چیز مانگیں گے۔ جیسے حضرت سلیمان ؑ نے اللہ تعا لیٰ سے ہر چیز پر بادشاہی کی درخواست کی تھی ۔ اور اللہ تعا لیٰ نے انہیں ہر چیز پر بادشاہی عطا کی ۔ ہمارے تمام وظائف کے ساتھ تین یا پانچ بار درود شریف کا پڑھنا لازمی ہوتا ہے۔ آج ہم کاروبار میں برکت اور رزق کے حوالے سے بات کریں گے۔ اور آپ کی تما م پریشانیاں اور مصیبتیں کیسے دور ہوں گی۔ اگر گھر کے دو افراد یہ دو عمل اپنے ذمے لے لیں تو اس وظیفے کی برکت سے اس گھر میں خیر و عافیت کے دروازے کھلے رہیں گے۔ تما م گھر کے افراد آپس میں پیارو محبت سے زندگی بسر کریں گے۔ محتاجی اور فقر وفاقہ اس گھر سے ہمیشہ کے لیے دور ہوجائےگا۔ حضرت حسن بصری ؒ یہ بہت ہی مشہور اور عالم دین ہستی گزریں ہیں۔ یہ حلقہ ء درس لگائے ہوئے تھے۔ کہ چار مختلف لوگوں نے اپنا دکھڑا اور اپنا رونا بیان کیا۔ان میں سے ایک نے کہاحضرت بہت قحط اور خشک سالی ہے مسائل ہی مسائل ہیں۔انسان تو دور اللہ کی مخلوق جانور بھی بھو ک کو ترس رہے ہیں۔ حضرت اللہ تعالیٰ سے دعا کریں کہ قحط اور خشک سالی کو دور فرمائیں۔ پھر بارشیں ہوں ہریالی ہو۔ زندگی کے رونقیں بحال ہوں۔ حضرت بصری ؒ نے کہا “استغفار، استغفار ،استغفار” یعنی اللہ تعالیٰ سے معافی کی دعا مانگوں۔ یہی سوال حضرت امام قرطبی ؒ کے ذہن میں آیا تھاوہ بھی حیران تھے کہ سوال چا ر تھے اور جواب ایک ہی تھا۔ حضرت بصری ؒ نے کہا میں نے اپنی طرف سے نہیں بتایا بلکہ ان کا جواب یہی بنتا تھا۔ کہ رب کائنا ت نے قرآن کی سورت نوح میں ان چار چیزوں کا ذکر کرتے ہوئے ارشاد فرمایا۔اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم یہی چا ر چیزیں ارشاد فرمائی ہیں۔بارش، مال، اولاداور باغات اور نہر یں بھی ملیں گی۔ لیکن آپ اللہ تعا لیٰ سے معافی مانگوں اور استغفار کریں۔ حضرت محمد ﷺ کا ارشادِ مفہوم ہے: کہ جو شخص زیادہ سے زیادہ استغفار کرے گاتو اللہ تعالیٰ اس کی ہر پریشانی اور تنگی کو آسانی میں تبدیل فرمائے گا۔ اور اسے وہاں سے عطا فرمائے گا جہاں سے اسے گمان بھی نہیں ہوگا۔ لہٰذا اپنے گھر میں استغفار کو کثرت سے پڑھیں گے تو اس گھرمیں رزق کی فروانی ہوگی۔ اور اس گھر سے ہر قسم کی پریشانی ختم ہوگی۔ اگر کسی کو پریشانی ہے تو آپ ہر نماز کے بعد صرف سات مرتبہ “سورت القریش” پڑھیں۔ اور اول و آخر ایک مرتبہ درود شریف پڑھیں۔ آپ دیکھیں آپ کی پریشانیاں کیسے ختم ہوں گی۔ اور رزق کے کھلتے دروازے آپ اپنی آنکھوں سے دیکھیں گے۔ جب ان دو کاموں کا اہتمام کریں گے تو میں اپنے پورے وثوق کے ساتھ کہتا ہوں کہ آپ کے تمام پریشانیاں دور ہوں گی۔ غم اور پریشانیا ں دور ہوں گی۔ آپ پورے وثوق کے ساتھ یہ دو عمل ایک “استغفار” اور دوسرا “سورت القریش” کو پڑھیں ۔ انشاءاللہ آپ کا رزق میں فروانی اور پریشانیاں اور تنگیاں ختم ہوجائیں گی۔

حضرت علی رضی اللہ عنہ نے صبح کے وقت جب دن کا آغاز ہوتا ہے۔ جب انسان رات سو کر صبح اٹھ کر نئی زندگی کا آغاز کر رہاہوتا ہے تو ایسے میں “سَلاَ مٌ قَوْلاً مِّنْ رَّبٍّ رِّحِیْمٍ”پڑھنے کی کیا فضیلت بتائی ہے۔ اور اس کے کیا معجزات ہیں؟ جس کا ترجمہ ہے ” پروردگار مہربان کی طرف سے سلام ” کہا جائے گا۔

یعنی سلامتی اللہ تعالیٰ کی طرف سے ایک کلمہ ہے۔ جو انسان کی مصیبتوں کو دور کرتا ہے۔ حضرت نوح علیہ السلام پر جب مشکل وقت آیا۔ تو اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ تمام جہانوں پر سلامتی ہوحکم ہو اے نوح ؑ! ہماری طرف سے سلامتی اور برکتوں کے ساتھ اتر جاؤ۔جب زمین پانی اگل رہی تھی جب آسمان سے موسلادھار بارش جاری تھی۔اس طوفانی دھارے میں پہاڑوں کی سب چوٹیاں زیر آب آچکی تھیں۔تو حضرت نوح ؑ کی کشتی ان موجوں پر سلامت تھی دراصل یہ اللہ تعالیٰ کا وہ پیغام تھا جو لفظ “سلامتی” کے ناطے سے حضرت نوحؑ کو پہنچاتھا۔ حضرت ابرہیم ؑ کی زندگی میں مشکل وقت وہ تھا جب نمرود

نے آپ کو آگ میں ڈالا تھا۔اللہ تعا لیٰ کی طرف سے فوراً پیغام سلامتی پہنچا ۔ یہ وہ کلمہ ہے جس کو پڑھنے سے اللہ پاک کی جانب سے سلامتی نازل ہوتی ہے۔ حضرت علی رضی اللہ عنہ کا فرمان ہےکہ جو شخص اس کو صبح کے وقت پڑھتا ہے۔ تو انسان اللہ کی حفاظت میں آجاتا ہے۔ پھر جو شخص اللہ کی حفاظت میں آجاتا ہے۔ پھر کون ہے جو اسے نقصان پہنچا سکے۔ اس آیت کو پڑھنے سے اللہ غیبی سے رزق عطا فرماتے ہیں۔خیر وبرکت عطاء فرما تے ہیں۔جہاں سے رزق کو کوئی وسیلہ نظر نہ آرہا ہوتو انسان مایوسی اور احساس کمتر ی کی اتھا ہ گہرائیوں میں گھر ا ہوا ہو تو ایسے شخص سے پریشانی دو ر ہو جاتی ہے۔ اول وآخر درود شریف طاق یعنی سات ، چھ یا تین مرتبہ اور گیارہ مرتبہ یہ قر آنی دعا پڑھ کر آسمان کی طرف منہ کرکے پھونک ماریں۔اور دل ہی دل میں دعا مانگیں۔اور پوری زندگی اس عمل کا معمول بنالیں۔ یہ عمل آپ کئی دن جاری رکھیں۔ اس عمل کے کرنے سے انشاءاللہ ! اللہ تعالیٰ آپ کی ہر حاجات پوری فرمائیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.