خاوند کی خاموشی میری بیوی ایک پاگل ہے

پچھلے ایک سال سے شادی کے بعد سے اب تک میرا نہایت ہی برا حال ہے۔ میری بیوی ایک پاگل ہے۔ کام سے تھکا ماندہ شام کو گھر میں آرام کی خاطر لوٹتا ہوں ہوں تو وہ پھٹ پڑنے کیلئے تیار، ڈھاڑتی ہوئی میرے سامنے کھڑی ہوتی ہے کہ دیر سے کیوں آئے ہو ؟ میں نے جو چیزیں منگوائی تھیں کیوں نہیں لائے؟یہ کیا گندی چیزیں لے کر آ گئے ہو؟۔ خریداری کا سلیقہ نہیں ہے تمہیں؟آج جلدی کس لئے آ گئے ہو؟ شام سے صبح تک تمہیں برداشت کرنا ہوتا ہے وہ کیا کافی نہیں ہوتا؟ \چنانچہ میں دوستوں کے کرنے پر ایک بزرگ سے ملا اور اپنی ساری کہانی اس محترم بزرگ کو سْنا ڈالی ۔ میں اس محترم بزرگ سے اسطرح گویا ہویا بابا جی میں نے بہت صبر کیا ہے مگر اب تو میں اپنی بیوی سے ہر بار یہی پوچھتا ہوں کہ کیا عذاب کی لغت میں کوئی ایسی بد زبانی یا ایسا طعنہ بچا ہے جو تو نے مجھے نہ مارا ہو! تیری بد زبانی اور بے ہودگی نے میری زندگی کو جہنم بنا کر رکھ دیا ہے۔ اْسکی ایک بات کے جواب میں مجھے دو سنانی پڑتی ہیں مگر اْسے نہ قائل کیا جا سکتا ہے اور نہ ہی خاموش۔ کئی بار لمحے تو کئی بار گھنٹے اس حال میں گزرتے ہیں، اور پھر گھر میں گزرا باقی کا وقت اپنے بال نوچتے یا ناخن چباتے گزرتا ہے۔ لیکن اب میرا ایسی صورتحال سے دل بھر

نہ کوئی رنگ، نہ ہی بو اور نہ کوئی مزا۔ بْزرگ کی ہدایت کے مطابق عمل کرتے ہوئے، منہ کو سختی سے بند کئے، میں گھر میں داخل ہو اکمرے میں جانے کیلئے کچن کے سامنے سے ہوتا ہوا گزر ہی رہا تھا کہ میری بیوی کی نظر مجھ پر پڑ گئی۔حسب توقع دائیں آنکھ اوپر اور بائیں نیچے کئے،اوپر سے گزر گیا تھا اور خالی ہاتھ واپس آ گئے ہو؟

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.