”عورت توجہ مانگتی ہے اور مرد ذہنی سکون جب یہ دونوں مل جائیں تو؟؟ خواتین و مرد حضرات کی حقیقت پر مبنی اقوال“

عورتیں بڑی سخت دماغ ہوتی ہیں۔ یوں تو انہیں صنف نازک کہاجاتا ہے مگر واسطہ پڑے تو معلوم ہوتا ہے ان جیسی صنف کرخت دنیا کے تختے پر اور کوئی نہیں ۔ مرد ہمیشہ اس عورت سے محبت کرتا ہے جوحقیقت میں محبت کیے جانے کے قابل نہیں ہوتی۔ عورت کی عزت اور ذلت اس کے اپنے ہاتھ میں ہے ایک نیک عورت کو سو مرد مل کر بھی گمراہ نہیں کرسکتے ۔ ایک خراب عورت سومردوں کو گمراہ کرسکتی ہے۔

حقیقی تعلق وہ ہوتا ہے جو وقت ، حالات ، ضرورت اور مزاج بدلنے کے بعد بھی قائم رہے۔ مرد جب یہ سوچ کر عورت کی ناقدری شروع کردیتا ہے کہ اس نے عورت کو فتح کرلیا ہے تو دراصل وہ غلطی پر ہوتا ہے کیونکہ وہ اس عورت کو فتح نہیں بلکہ مسما رکر چکاہوتا ہے ۔ اور مسمار شدہ عمارتیں باعث عبرت تو ہوسکتی ہیں باعث فخر نہیں ۔ اپنی محبت کے ساتھ جنسی تعلقات کی خوبصورتی کا تجربہ کرنے سے پہلے کبھی نہ مریں۔ انسان کی مثال بھی اس پجارن کی مانند ہے جواپنی خواہش کے اصل کوجانے بنا دیو تا کے آگے ناچتی رہے اور اپنے پاؤ ں لہولہان کربیٹھے۔ محبت میں اندھی

ایسی لڑکی کی کہانی جیسے ایک چہرے کے سوا کوئی نظر نہ آیا۔ رزق سخاوت میں پوشیدہ ہے ، لوگ اسے محنت میں تلاش کرتے ہیں۔ کبھی کبھی ہم اپنی چیزوں کو نادانستگی میں کھو دیتے ہیں ۔ مڑ کر دیکھنے پر جب وہ نہیں ملتیں تو اندر ایک سناٹا چھا جاتا ہے کھودینے کا ملال روح کو پامال کردیتا ہے اور ہم خالی ہاتھ رہ جاتے ہیں۔ ہر چہرے کی فطرت میں وفاداری نہی ہوتی۔ عورت توجہ مانگتی ہے اور مرد ذہنی سکون جہاں بھی ان دونوں کو یہ چیزیں ملیں گی یہ دونوں وہی کے ہو کر رہ جائیں گے۔ احترام ایسا قدم ہے جومحبت سے ہزاروں میل آگے ہے۔ جس معاشرے میں ناچتی عورت پر نچھاور کرنے کو پیسے ہوں

لیکن لاچار عورت کے گھر بسانے کے واسطے نہیں ہوتی تو ایسے معاشرے میں من ا فقت و بے غیرتی کا راج ہوتا ہے۔ شادی ایک مذہبی فریضہ ہے یا معاشرتی فریضہ ؟ اگرمذہبی فریضہ ہے تو لوگ معاشرے کی پرواہ اور فکر ہی کیوں کرتےہیں؟ اور اگر معاشرتی فریضہ ہے تو لوگ مذہبی شرائط کیوں دیکھتے ہیں۔ محبت میں رنگ نسل مذہب کو نہیں دیکھاجاتا ۔ بات شادی کی ہو تو ان ساری شرائط کے ساتھ تنخواہ ، تعلیم ، طور طریقے ، رکھ رکھاؤ ، گھر ، گاڑی کے مطالبات کیوں اہم ہوجاتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *