”مرد جب چیخ کر محبت کا اظہار کرتا ہے تب عورت اس کو یوں“

کیچڑ سے بچ کے چلنے والے اصل میں خود کو اور اپنے کپڑوں کو خراب ہونے سے بچاتے ہیں جبکہ کیچڑ اس گھمنڈ میں ہوتا ہے کہ سب اس سے ڈرتے ہیں ہمارے اردگرد بھی کچھ ایسے ہی متکبر لوگ ہوتے ہیں۔ محبت کا سبق بارش سے سیکھو جو پھو لوں کے ساتھ ساتھ کانٹوں پر بھی بر ستی ہے۔ زیادہ سوچنے سے خوشیوں کا قتل ہو تا ہے اور خوف کی وجہ سے حوصلے کا قتل ہوتاہے اور جھوٹ بولنے سے اعتماد کا قتل ہو تا ہے

اور شک کرنے سے رشتو ں کا قتل ہوتا ہے۔ بعض اوقات صحیح ہوتے ہوئے بھی اپنے موقف سے پیچھے ہٹ جا نا ، بڑے فساد سے بچا لیتا ہے۔ الفاظ کی اپنی ہی ایک دنیا ہوتی ہے ہر لفط اپنی ذمہداری نبھا تا ہے کچھ لفظ حکو مت کرتے ہیں کچھ غلامی کچھ لفظ حفاظت کرتے ہیں اور کچھ وار جب ایک مرد سچےدل سے عورت کو چاہتا ہے اظہار کرتا ہے چیختا ہے چلا تا ہے کہ میرا سب کچھ تم ہو عشق کرتا ہوں نکاح کر نا چاہتا ہوں تب عورت اس کا مذاق بنا تی ہے اسےاگنور کرتی ہے اسےدھتکارتی ہے اور پھر جب وہ تھک کر مزید اپنی محبت کی بے عزتی نہیں کروا سکتا۔ اسی کی خوشی کے لیے جب ان سے دور ہو جاتا ہے

تو عورت کہتی پھرتی ہ مرد نے دھو کا دیا ہی۔ سب ایک جیسے ہوتے ہیں میرا بھرو سہ اٹھ گیا دھوکا کس نے دیا کیا اسے اپنا لہجہ یاد نہیں ہوتا؟ لیکن الزام ہمیشہ مرد پر ہی آجا تا ہے ابنِ آدم بھی کھلو نا نہیں نکاح کر سکو تو محبت کرو ورنہ خدارا خوف کرو۔ عورت کی ساری برائیاں معاف کر د ینا مگر کردار کی گری ہوئی عورت کو کبھی معاف نا کر نا ورنہ نسلوں کو حساب دینا پڑے گا۔ کبھی کبھی کچھ اچھے خاصے خوش مزاج لوگ بھی تلخ باتیں کہہ اور لکھ دیتے ہیں کیو نکہ کچھ باتیں انسان پسند کرتا ہے کچھ اس کے مزاج میں ہوتی ہیں اور کچھ وہ زندگی سے سیکھ لیتا ہے ہر بات کی وجہ محبت کا ہو جا نا یا محبت کا کھو جا نا نہیں ہوتا۔

زندگی میں وقتی نا کامی آپکو یا تو بنا دیتی ہے یا پھر بگاڑ دیتی ہے۔ زندگی نے کبھی یہ شرط نہیں رکھی کہ میں فلاں فلاں شخص کے بغیر اچھی نہیں گزروں گی زندگی گزر ہی جاتی ہے۔کسی بے قدرے شخص سے کی جانے والی مخلص محبت آپ کو ساری زندگی کے لیے ذہنی مریض بنا نے کو کافی ہوتی ہے۔ اگر خوش ہو تو آہستہ سے ہنسا کرو۔ تا کہ غم نہ جاگ جائے اور اگر غمگین ہ وتو آہستہ سے رویا کرو تا کہ آ نے والی خوشی نا امیدی میں نہ بدل جائے۔ اگر انسان کو زمین پر پیر مار کر اور سینہ تان کر چلنے کی عادت ہو نا اور زندگی کہیں نہیں ہوتی صرف موت ہوتی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *