عورت اگر بدکاری کرے تو ان کی پہچان دو باتوں سے ہوتی ہے

کسی نے ایک درویش سے پوچھا تھا کہ دنیا میں سب دکی کیو ہے درویش نے ہنس کر جواب دیا خوشیاں سب کے پاس گئے ہیں بس ایک خوشی دوسرے کا درد بن جاتا ہے

وجہ بنا کر ایک دوسرے کو چھوڑنے کے بجائے وجہ بتا کر رشتہِ بچا لینا بہتر ہے

وہ جو نپڑی جہاں عورت مسکراتی ہے اس عالیشان محل سے بہتر ہے جہاں عورت روتی ہے شادی ناکام کسی بھی وجہ سے ہو کامیاب اکثر عورت کی وجہ سے ہوتی ہے

دن کے اجالے میں عورت کو گالیاں دینے والا مرد عورت کے اندھیرے میں جسم کی بھوک میں اسی عورت کے پاؤں بھی چومے لیتا ہے

جب پردے کا حکم ہوا تو دنیا کی بہترین عورتوں نے دنیا کی بہترین مردوں سے بھی پردہ کیا تھا

آغاز پر یہ اعتبار نہ کر لیا کریں سچی الفاظ تو وہ لمحے میں کہے جاتے ہیں

زندگی میں پیسہ ہی سب کچھ نہیں ہوتا پیار اور احساس کرنے والا ساتھی ہو تو عورت غریبی میں بھی مالک ہے جیسے زندگی گزار سکتی ہے

سب بھکاری ہے سب کو ماننا پڑتا ہے کوئی دنیا مانگتا ہے کوئی عشق مانگتا ہے اور یہ سب کچھ نہیں مانگتا وہ خواہشات کا ختم ہونا مانگتا ہے

جس عورت پر فہاشی کا الزام ہو اس کو قید سے مار ڈالنے کا حکم اور تمھاری عورتوں میں سے جو کوئی بدکاری کریں ان پر اپنوں میں سے چار مرد اگر وہ گواہی دیتے تو ان عورتوں کو ان کے گھروں میں بند کردو یہاں تک کہ انہیں موت آ جائے یا اللہ ان کے لیے کوئی راستہ نکال دے

لباس قیمتی ہو یا سستا کردار کو نہیں چھپا سکتا کردار کو اچھا کرو ہر لباس میں اچھے لگو گے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.