مرد دو طرح کی عورتوں سے محبت کرتا ہے

مجھے کم گو انسان ہمیشہ اچھے لگے پتہ ہی نہیں چلنے دیتے کہ وہ کسی خیال میں رقص کر رہے ہیں یاد نیا جہاں کا درداپنے سر میں سموۓ ہوۓ ہیں

تلی جیانرم و نازک بچپن اور گلاب جیسی ر نگین جوانی غرق ہوگئی اس نامراد علم و جستجو میں اور آج کیا ملا کچھ بھی نہیں اپنا آپ بھی کہیں کھو بیھٹا خدا تو رہا ایک طرف اب تو اپنا آپ تک نہیں مل رہا ۔

دوپٹہ اسے کہتے ہیں جو سر پر ہو جو گلے میں ہو اسے تو پٹہ کہتے ہیں ۔ اپنی آنکھوں کے حسن کے لیے دوسروں میں اچھائی تلاش کرے حسین لبوں کے لیے صرف محبت بھرے الفاظ ادا کر میں اور اطمینان کے لئے یہ بات ذہن نشین رکھیں کہ آپ اکیلے نہیں ہیں ۔

یہ دنیا حقیقت سے زیادہ دکھاوے پر چلتی ہے لہذا یہ عین ضروری ہے کہ وقت کچھ جانے کی بجاۓ صرف جانے کی اداکاری کر دی جاۓ یاد رکھنا جس عورت کا قد مرد سے چوٹا ہو ایسی عورت کو مرد کے ساتھ اچھا تصور کیا جاتا ہے عورت کا قد مردسے چوٹاتو خوبصورت لگتی ہے ۔

ہر مرد دوعور تیں سے محبت کرتا ہے پہلی تواس کی تخیل شاخسانہ ھے اور دوسری ابھی تک تخلیق ہی نہیں ہوئی ۔ انسان کو جو چیز آسانی سے مل جاۓ اسکی اتنی قدر نہیں ہوتی جتنی قد راس چیز کی ہوتی ہے جو سفارشوں سے رشوت دے کر اور لمبی لائنوں میں لگ کر مہینوں کے انتظار کے بعد ملے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.