مرد اس عورت کے لیے تڑپتا ہے اپنا گھر بار، ماں باپ ، بہن بھائی بھی چھوڑ دیتاہے جوعورت اسے ۔۔؟؟

عزت کے رشتے محبت سے بڑھ کر ہوتے ہیں۔ عورت دماغ والوں کے لیے مکار اور احساس والوں کےلیے شاہکار ہوتی ہے۔ عورت کے بارے میں گن دی رائے ہمیشہ دماغ والے ہی قائم کرتے ہیں۔ احساس والے تو عورت کو اللہ کا بہترین تحفہ سمجھتے ہیں اس لیے ہمیشہ کہتا ہوں عورت دماغ سے نہیں احساس سے سمجھ آتی ہے۔

بیٹا یا بیٹی پیدا کرنا عورت کے اختیار میں نہیں ہوتا اور یہ بات ایک عورت کوہی سمجھانی مشکل ہے۔ کسی کو ذلیل کرنے سے پہلے اپنے آپ کو ذلیل ہونے کے لیے تیار کرلیں کیونکہ اللہ کا تراز وانصاف تولتا ہے۔ قطع تعلقی کے بھی کچھ اصول ہوتے ہیں۔

جن میں سب سے پہلا اصول رازوں کی تدفین ہے۔ نفرت کرنا آسان ہے، نفرت جھیلنا بہت مشکل ۔ عورت کو ہمیشہ عورت کے روپ میں ہی دیکھا گیا اور اسے کمزور اور ڈرپوک قرا دیا۔ کبھی عورت کو ماں کے روپ میں بھی دیکھنا۔ تمام دنیا پر اکیلی ہی بھاری ہوگی۔ تعلق جسم کا نہیں احساس کا ہوتا ہے احساس مرگیا تو سمجھو تعلق ختم ۔ خاموشی جب سکو توڑتی ہے جانے کتنوں کے دل جوڑتی ہے۔ اللہ دل سے وہ لوگ بھی نکال دیتاہے جن کو ہمیں لگتا ہے کہ ہم کبھی بھول نہیں پائیں گے

زندگی تو سستی ہے “صاحب” گزارنے کے طریقے مہنگے ہیں۔ ہم خود ہی دل و جان کی تباہی کا سبب ہیں۔ آپ چار دن منظر سے غائب ہو کر دیکھیں لوگ آپ کا نام بھول جائیں گے ، انسان ساری زندگی اس فریب میں گزار دیتا ہے کہ وہ دوسروں کے لیے اہم ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ ہمارے ہونے نہ ہونے سے کسی کو فرق نہیں پڑتا ، یہاں تک کہ مرجانے سے بھی کسی کو زندگی پر کوئی فرق نہیں آئے گا۔

یہی لوگ ریسٹ ان پیس اور فیلنگ سیڈیا بروکن کا سٹیٹس دے کر اپنی اپنی زندگی کی رعنائیوں میں گم ہوجائیں گے ، یہ وہ تلخ حقیقت ہے جسے ہم جانتے بوجھتے نظرانداز کرتے ہیں، اپنی زندگی کو اللہ کے راستے میں وقف کیجیے اللہ کے لیے خود کو جہالت سے نکال کر حق اور سچ کی طر ف لوٹ آئیے یہ دنیا ایک فریب ہے اس میں خو د کو تباہ نہ کیجیے۔ انسان چاہتا ہے کہ وہ چاہا جائے لیکن صرف اپنے من چاہے انسان کے ہاتھوں ، یہ بھی تو ممکن ہے تم جس سے محبت کرو ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *