پاکستانیوں کو بڑی خوش خبری مل گئی

شارجہ میں مقیم پریشان پاکستانیوں کو بڑی خوش خبری مل گئی
پاکستانی میاں بیوی نے اپنے ریسٹورنٹ آنے والوں کو مفت کھانا دینے کا اعلان کر دیا

شارجہ(2 نومبر2020ء ) متحدہ عرب امارات میں کورونا کی وبا کے بعد ایک معاشی بحران نے جنم لیا ہے جس دوران لاکھوں افراد بے روزگار ہو گئے ، یا ان کی تنخواہیں کم کر دی گئی ہیں۔ اس صورت حال کا پاکستانیوں پر بھی بہت بُرا اثر پڑا ہے۔ ایسے میں ایک پاکستانی جوڑے نے اعلان کیا ہے کہ جن افرا دکے پاس کھانا میسر نہیں ، وہ رات کے وقت ان کے ریسٹورنٹ آ کر پیک کھانا گھر لے جا سکتے ہیں۔
پاکستانی شہری شجاعت علی اور ان کی بیوی عائشہ نے نیشنل پینٹس کے قریب ”بریانی سپاٹ“ کے نام سے ڈیڑھ ماہ پہلے کھولا ہے۔ جہاں وہ روزانہ درجنوں افراد کو مفت کھانا کھلا رہے ہیں۔ شجاعت نے بتایا کہ ان کا ریسٹورنٹ رات10 بجے بند کر دیا جاتا ہے تاہم یہاں ضرورت مند لوگوں کے لیے ایک کاؤنٹر کھُلا رہتا ہے۔ جہاں خوراک کے تیار پیکٹ موجود ہیں۔ جو شخص بُرے حالات کا شکار ہیں اور ان کے پاس کھانا خریدنے کے پیسے نہیں، وہ یہاں سے کھانے کے پیکٹ بلامعاوضہ لے جا سکتے ہیں۔دراصل ہمارے گاہکوں کی جانب سے جو کھانا استعمال میں نہیں آتا اور صاف سُتھرا ہوتا ہے، اسے ہم سنبھال کر ان کے پیکٹ بنا دیتے ہیں۔ جن سے ہم ضرورت مندافراد کا پیٹ بھرتے ہیں۔ بہت سارے ریسٹورنٹس میں ایسا صاف پڑا کھانا ضائع ہو جاتا ہے۔ تاہم میری بیوی عائشہ نے مشورہ دیا کہ گاہکوں کا بچایا صاف کھانا اگر پیک کروا کر ضرورت مندوں کو بانٹ دیاجائے تو یہ ایک اچھا کام ہو گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.