فلسطینیوں کی مالی امداد بحال کردیں گے

جوزف بائیڈن صدر امریکا منتخب ہونے کے بعد فلسطینیوں کی مالی امداد بحال کردیں گے
واشنگٹن میں پی ایل او کا دفتر اور مشرقی القدس میں امریکی قونصل خانہ دوبارہ کھول دیا جائے گا، کمالا ہیرس

واشنگٹن( 04 نومبر2020ء) ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیداوار جوزف بائیڈن منتخب ہونے کی صورت میں فلسطینیوں کی مالی امداد بحال کردیں گے اور واشنگٹن میں تنظیمِ آزادیِ فلسطین (پی ایل او)کا دوبارہ دفتر بھی کھول دیں گے۔میڈیارپورٹس کے مطابق اس بات کا اعلان ان کے ساتھ نائب صدارت کی امیدوار کمالا ہیرس نے ایک انٹرویو میں کیا ۔
انھوں نے کہا کہ ہم فلسطینی عوام کی اقتصادی اورانسانی امداد کی بحالی کے لیے فوری طور پر اقدامات کریں گے۔غزہ میں جاری انسانی بحران کا حل نکالیں گے۔مشرقی القدس (یروشلیم)میں امریکی قونصل خانہ دوبارہ کھولیں گے اور واشنگٹن میں پی ایل او کا مشن دوبارہ کھولنے کے لیے بھی اقدامات کریں گے۔جوزف بائیڈن صدر منتخب ہونے کے بعد یہ اقدامات کرتے ہیں تو وہ اس طرح موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کے اقدامات پر خطِ تنسیخ پھیر دیں گے۔ ٹرمپ انتظامیہ کے تحت امریکی محکمہ خارجہ نے غربِ اردن اور غزہ کی پٹی میں آباد فلسطینیوں کی 20 کروڑ ڈالر کی امداد بند کردی تھی اور مشرقی القدس میں رہنے والے فلسطینیوں کو الگ سے دی جانے والی ڈھائی کروڑ ڈالر کی امداد بھی روک لی تھی۔البتہ اس نے اس سال فلسطینی اتھارٹی کو کرونا وائرس کی وبا سے نمٹنے کے لیے صرف پچاس لاکھ ڈالر کی مالی امداد دی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.