چینی 15 سے 20 روپے سستی ہو جائے گی

چینی 15 سے 20 روپے سستی ہو جائے گی
مہنگائی پر قابو پانا حکومت کی اولین ترجیح ہے،درآمد چینی مارکیٹ میں آ چکی ہے جو پندرہ بیس روپے فی کلو سستی ہو جائے گی۔ وفاقی وزیر حماد اظہر

اسلام آبا د ( 07 نومبر2020ء) وفاقی وزیراء کا کہنا ہے کہ مہنگائی پر قابو پانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔درآمد چینی مارکیٹ میں آ چکی ہے جو پندرہ بیس روپے فی کلو سستی ہو جائے گی۔اسلام آباد میں وفاقی وزیر خوراک فخر امام ، وزیر اطلاعات سینیٹر شبلی فراز اور وزیر صنعت و پیدوار حماد اظہر نے مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ گندم اور چینی کی قیمتوں کے حوالےسے حکومتی اقدامات سے آگاہ کیا۔سید فخر امام کا کہنا ہے کہ گندم کی قیمت میں اضافے کی وجہ پیدوار میں 20 لاکھ ٹن کمی ہے۔ذخیرہ اندوزوں نے بھی گندم اسٹاک کر لی جس سے قیمت میں اضافہ ہوا لیکن اب درآمدی گندم سے قیمت میں کمی ہونا شروع ہو گئی ہے۔نجی شعبہ نے دو لاکھ 20 ہزار ٹن گندم برآمد کی ہے جب کہ مجموعی طور پر جنوری تک ملک میں 18 لاکھ ٹن درآمدی گندم دستیاب ہو گی،ملک میں گندم کی کمی نہیں ہونے دی جائے گی۔حماد اظہر کاکہنا ہے کہ مارکیٹ میں درآمدی چینی آ چکی ہے جس کی قیمت 15 سے 20 روپے فی کلو کم ہو گی۔جمعہ کے روز اسلام آباد میں وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز اور وفاقی وزیر صنعت و پیداوار حماد اظہر کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران وفاقی وزیر نیشنل فوڈ سیکورٹی نے کہاکہ تقریباً 11سالوں کے بعد گندم کی درآمد کی طرف آئے ہیں اور یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ فروی تک 18لاکھ ٹن گندم درآمد کی جائے گی ۔بدقسمتی سے سندھ اور خیبر پختونخوا نے گندم کی بروقت خریداری کی جانب توجہ نہیں دی تھی اور حکومت سندھ نے گذشتہ سال گندم نہیں خریدی جس کے بعد بحران آنے پر دسمبر میں پاسکو نے انہیں 4سے 6لاکھ ٹن گندم فراہم کی۔ انہوں نے کہا اس وقت سرکاری اور نجی شعبے کی جانب سے گندم درآمد کی جارہی انہوں نے کہاکہ اس وقت تک پاکستان میں گندم کٹائی کے سیزن میں 122دن رہ چکے ہیں اورفوری طور پر صوبوں کو 40لاکھ ٹن گندم فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.