ڈونلڈ ٹرمپ کی اہلیہ میلانیا کا فیصلہ

امریکی صدارتی انتخابات میں شکست، ڈونلڈ ٹرمپ کی اہلیہ میلانیا کا طلاق لینے کا فیصلہ
ٹرمپ اور میلانیا کی شادی ایک سمجھوتے کے تحت چل رہی،ان کے وائٹ ہاؤس میں بھی الگ الگ بیڈرومز ہیں، ٹرمپ کے صدارت چھوڑنے اور وائٹ ہاؤس سے جانے کے بعد میلانیا طلاق لے لے گی۔ سابق عہدیدار سٹیفنی ووک آف کا دعویٰ

واشنگٹن ( 08 نومبر2020ء) امریکی صدارتی انتخابات میں شکست کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اہلیہ میلانیا ٹرمپ نے طلاق لینے کا فیصلہ کرلیا، ٹرمپ حکومت کی سابق عہدیدار سٹیفنی ووک آف نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ وائٹ ہاؤس چھوڑنے کے ساتھ ہی میلانیا طلاق لے لے گی، منیلا شدت کے ساتھ وائٹ ہاؤس سے جانے کا انتظار کررہی ہیں۔میل آن لائن کے مطابق سابق حکومتی عہدیدار سٹیفنی ووک آف کا کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کو الیکشن ہارنے کے ساتھ ہی اپنی بیوی کھونے کا بھی صدمہ برداشت کرنا پڑے گا۔ کیونکہ میلانیا ٹرمپ اپنے شوہر سے جلد طلاق لینے جا رہی ہے۔ جونہی ٹرمپ امریکی صدارت چھوڑ کر وائٹ ہاؤس سے رخصت ہوجائیں گے تو اسی وقت منیلا بھی ٹرمپ سے علیحدگی اختیار کرلیں گی۔میلانیا وائٹ ہاؤس سے رخصت ہونے کا ایک ایک منٹ گن گن کر انتظار کر رہی ہیں۔ اسی طرح 2016ء میں بھی جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے غیرمتوقع طور پر الیکشن جیتنے پر میلانیا پھوٹ پھوٹ کر رونے لگی تھیں، میلانیا کو یقین ہی نہیں تھا کہ ٹرمپ جیت جائے گا۔ الیکشن جیتنے کے باوجود میلانیا پانچ ماہ تک وائٹ ہاؤس میں شفٹ نہیں ہوئی تھیں۔ سٹیفنی نے مزید بتایا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور ان کی اہلیہ میلانیا کے وائٹ ہاؤس میں بھی الگ الگ بیڈ رومز ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.