کورونا سے جون والی صورتحال

ملک بھر میں کورونا سے جون والی صورتحال پیدا ہونے کا خدشہ

ماہرین نے کورونا کے حوالے سے خطرے کی گھنٹی بجا دی
کراچی ( 26 نومبر 2020ء) :ملک بھر میں کورونا کیسز میں دن بدن اضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے جس سے نہ صرف حکومت بلکہ شہریوں کی تشویش میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔ ایسے میں ماہرین نے عوام کے لیے کورونا کے حوالے سے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق انڈس اسپتال کے سربراہ ڈاکٹر باری نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کورونا کی دوسری لہر پر سب کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں ، ہرقسم کی عوامی تقریبات پر پابندی عائد کرنی چاہئیے جبکہ لوگ غیر ضروری بازار بھی نہ جائیں۔ ڈاکٹر باری نے کہا کہ اسپتالوں میں بیڈز بھرے ہوئے ہیں، اس وقت ملک کورونا سے جون والی صورتحال ہوچکی ہے، احتیاط نہ کی گئی تو چند دنوں میں صورتحال زیادہ خراب ہوسکتی ہے، ماسک لباس کا لازمی حصہ ہونا چاہئیے۔ دوسری جانب حنیف میڈیکل ڈائریکٹر ٹباہارٹ انسٹیٹیوٹ ڈاکٹربشیر حنیف کا کہنا تھا کہ روزانہ کی بنیاد پر 15سے 20 دل کےمریض اسپتالوں میں داخل ہوتے ہیں، کووڈ پازیٹو اوردل کے مریضوں کو انجیوگرافی کروانی چاہئیے۔ ڈاکٹربشیر کا کہنا تھا کہ اس بیماری میں جسم میں خون کے لوتھڑے بننےکا چانس زیادہ ہوتا ہے، دل کےمریضوں کوکورونا میں زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کورونا کی وجہ سے پھیپھڑے بھی خراب ہوسکتے ہیں، اگر لیٹنے کے بعد سانس پھول رہا ہے توضرورچیک اپ کروائیں۔ انہوں نے تاکید کی کہ اگر دل کے مریض کوکورونا ہوجائے تو وہ لازمی ڈاکٹر کو چیک کروائے۔ خیال رہے کہ کورونا کی دوسری لہر نے شہریوں کو تیزی سے اپنی لپیٹ میں لینا شروع کر دیا ہے۔ گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا سے 40 اموات ہوئیں جبکہ 3309 نئے کیسز رپورٹ ہوئے۔ جس کے بعد کورونا سے ہونے والی اموات کی تعداد 7 ہزار 843 ہوگئی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.