خالی نشستوں پرضمنی انتخابات

اپوزیشن کی استعفوں کی د-ھمکی‘حکومت کا خالی نشستوں پرضمنی انتخابات کروانے کا اعلان
پی ڈی ایم کی پشت پر کچھ ممالک کا ہاتھ ہے‘ سول ملٹری تعلقات اچھے ہیں، ہم ایک پیج پر ہیں جبکہ ملکی معیشت درست سمت کی طرف چل پڑی ہے، کچھ ممالک کبھی نہیں چاہتے کہ پاکستان کی معیشت مضبوط ہو. عمران خان کی سنیئرصحافیوں سے گفتگو
اسلام آباد(ا نٹرنیشنل پریس ایجنسی۔08 دسمبر ۔2020ء) وزیراعظم عمران خان نے اپوزیشن جماعتوں کے ممکنہ استعفوں سے خالی نشستوں پر ضمنی الیکشن کرانے کے عزم کا اظہار کردیا ہے. سینئر صحافیوں اورکالم نگاروں سے گفتگو میں عمران خان نے کہا کہ اپوزیشن نے استعفے دیے تو ہم ان نشستوں پر ضمنی الیکشن کروادیں گے انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن پراعتماد ہے تو میں ان سے زیادہ پراعتماد ہوں، جو جو استعفیٰ دے گا اس کی نشست پر ضمنی الیکشن کروادیں گے.
وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن سب کچھ ایک منصوبہ بندی کے تحت کررہی ہے،ان کی پشت پر کچھ ممالک کا ہاتھ ہے انہوں نے کہا کہ سول ملٹری تعلقات اچھے ہیں، ہم ایک پیج پر ہیں جبکہ ملکی معیشت درست سمت کی طرف چل پڑی ہے، کچھ ممالک کبھی نہیں چاہتے کہ پاکستان کی معیشت مضبوط ہو. عمران خان نے یہ بھی کہا کہ کرپٹ سیاسی مافیا نظام کو چلنے نہیں دے رہے ہیں، میں انہیں بتادوں گا کہ نظام کیسے چلے گا انہوں نے کہا کہ یہ قانون کی حکمرانی کی جنگ ہے، میں جدوجہد کررہا ہوں اور مجھے پتا ہے کہ اس میں جیت میری ہی ہوگی، اپوزیشن کے کہنے پر آج نیب کو ختم کردیں تو کل یہ اسمبلیوں میں آکر بیٹھ جائیں گے.
وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن جلسے کرنا چاہتی ہے تو کرلے، جلسوں، لانگ مارچ اور دھرنوں کا میں بھی بادشاہ ہوں انہوں نے کہاکہ حزب اختلاف سے این آر او اور کرپشن کیسز سے ہٹ کر ہر معاملے پر بات چیت کے لیے تیار ہوں عمران خان نے اپنے مشیر برائے امور خزانہ سے متعلق پوچھے گئے سوال پر کہا کہ اگر حفیظ شیخ کو نیب کیس کی وجہ سے ہٹانا پڑا تو ہمارے پاس آپشن موجود ہے.
انہوں نے کہا کہ حکومت نے اپوزیشن کو لاہور جلسے کی اجازت نہیں دی لیکن ہم انہیں روکیں گے بھی نہیں وزیراعظم نے افسوس کا اظہار کیا کہ کورونا وائرس سے اموات مسلسل بڑھ رہی ہیں لیکن عام آدمی اور اپوزیشن اسے سنجیدہ نہیںلے رہی انہوں نے کہا کہ این آر او اور کرپشن کے علاوہ حکومت اپوزیشن سے بات کرنے کو تیار ہے، ہماری غلطی تھی کہ آئی ایم ایف میں جانے میں تاخیر کی.

Sharing is caring!

Comments are closed.