اسرائیلی مسافروں کو ملک میں داخل ہونے سے روک دیا

اماراتی حکام نے اسرائیلی مسافروں کو ملک میں داخل ہونے سے روک دیا

اسرائیلی مسافر کئی گھنٹے تک ایئرپورٹ پر پھنسے رہے آخر ان سے الیکٹرانک ویزہ فارم پُر کروانے کے بعد دُبئی میں داخلے کی اجازت دی گئی
دُبئی(دسمبر2020ء) اماراتی پرواز سے تل ابیب سے دبئی پہنچنے والے اسرائیلی مسافر کو اماراتی حکام نے ملک میں داخل ہونے سے روک دیا۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق امیگریشن حکام نے مسافروں سے دوبارہ آن لائن ویزہ انٹری کرنے کو کہا۔دبئی میں اماراتی حکام نے اسرائیلی مسافروں کو ایئرپورٹ پر چار گھنٹے تک روکے رکھا، اسرائیلی مسافر فلائی دبئی کی پرواز سے تل ابیب سے دبئی پہنچے تھے۔طیارے میں تکنیکی خرابی کے باعث 160 اسرائیلی مسافروں کو دبئی ایئرپورٹ پر رکنا پڑا۔عرب میڈیا کا کہنا تھا کہ تکنیکی خرابی کے باعث اسرائیل جانے والی دو دیگر پروازیں بھی تاخیر کا شکار ہوئیں۔اسرائیلی وزارت خارجہ نے اماراتی وزارت خارجہ سے ابطہ کیا ہے اور مسئلہ حل کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔اسرائیلی وزیر خارجہ کے ترجمان لیئر ہائیت نے بتایا کہ فلائی دُبئی کی یہ فلائٹ تل ابیب سے 200 اسرائیلی مسافروں کو لے کر دُبئی ایئرپورٹ اُتری تھی،تاہم کچھ غلط فہمی کی وجہ سے یہ مسئلہ ہوا ہے۔اسرائیلی اور اماراتی وزارت خارجہ کی جانب سے یہ معاملہ حل کر لیا گیا ہے۔ اسرائیلی سیاحوں سے ایئرپورٹ پر ہی الیکٹرانک ویزہ فارم پُر کروایا گیا جس کے بعد انہیں امارات میں داخلے کی اجازت مل گئی۔ جبکہ اسرائیل سے امارات کے لیے تیار فلائٹس کے مسافروں کو بھی یہ الیکٹرانک ویزے جاری کر دیئے گئے ہیں۔ دونوں ممالک کے درمیان ویزہ فری ٹریول پر اتفاق ہوا تھا۔گزشتہ ہفتے اماراتی حکام کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ جب تک ویزہ سے استثنیٰ سے متعلق معاہدہ طے نہیں پا جاتا اسرائیلی سیاحوں کو سیاحتی ویزہ لینا لازمی ہوگا۔ فی الحال یہ ٹورسٹ ویزہ ایئرلائنز اور ٹورازم کمپنیوں کی جانب سے جاری کیا جا رہا ہے۔ فلائی دُبئی کی جانب سے مسافروں کے ایئرپورٹ پر پھنسے رہنے پر ان سے معذرت کی گئی ہے۔ اس سارے واقعے میں پیدا ہونے والے مسئلے سے متعلق تحقیقات جاری ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.