لڑکی اور لڑکے میں کوئی دوستی نہیں ہوتی

“لڑکی اور لڑکے میں کوئی دوستی نہیں ہوتی” خلیل الرحمان قمر نے خاتون ڈرامہ نگاروں کو آڑے ہاتھوں لے لیا

کراچی(ویب ڈیسک) معروف مصنف خلیل الرحمان قمر کا کہنا ہے کہ ہمارا المیہ ہے کہ خاتون ڈراما نگار ہی ہمارے ڈراموں میں ساس بہو اور نند بھابھی جیسے رشتوں کی تذلیل کررہی ہیں۔خلیل الرحمان قمر نے حال ہی میں ایک یوٹیوب چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے پاکستانی ڈراموں کی کہانی سمیت مختلف موضوعات پر بات کی۔ خلیل الرحمان نے بوائے فرینڈ اور گرل فرینڈ یعنی لڑکے اور لڑکی کے درمیان دوستی پر اپنی رائے دیتے ہوئے کہا میں ایک بات ڈنکے کی چوٹ پر کہنا چاہتا ہوں کہ لڑکی اور لڑکے میں کوئی دوستی نہیں ہوتی۔ یہ دنیا کا سب سے بڑا اور سفید جھوٹ ہے۔
میزبان نے خلیل الرحمان سے سوال کیا آپ سے شوبز میں لوگ بہت ڈرتے ہیں اس کی کیا وجہ ہے ؟ جس پر خلیل الرحمان نے کہا لوگ مجھ سے اسلیے ڈرتے ہیں کیونکہ میں اپنے کام کے ساتھ ایماندار ہوں۔ بددیانت ڈریں گے مجھ سے اور جو ایماندار ہیں وہ نہیں ڈرتے۔میزبان نے پاکستانی ڈراموں میں دکھائی جانے والی کہانیوں سے متعلق سوال پوچھتے ہوئے کہا کہ اب ہماری کہانیوں میں افیئرز کے علاوہ کوئی اور موضوعات رہے نہیں اور زیادہ تر اسی موضوع پر ڈرامے بن رہے ہیں اس پر آپ کا کیا کہنا ہے؟خلیل الرحمان نے کہا سب سے بڑا اسٹگما (بدنما داغ) یہ ہے کہ یہاں ساس، بہو، نند اور بھابھی کے اوپر ڈرامے بن رہے ہیں اور 99.99 فیصد ان ڈراموں کی کہانیاں عورتیں لکھ رہی ہیں اور یہ ان چاروں رشتوں کو ذلیل کررہی ہیں اور یہ ہمارے ڈراموں کا المیہ ہے۔قومی کپتان بابر اعظم کے جن-سی ہر-اسا-نی والے کیس کے بارے میں بات کرتے ہوئے خلیل الرحمان قمر نے کہا وہ لڑکی بہت ہی خراب ہے جو 10 سال بابر اعظم کے ساتھ ریلیشن میں رہی اور اب آکر اس کے بارے میں بکوا-س کررہی ہے۔ مجھے معاف کریں میں اس موضوع پر بات نہیں کرنا چاہتا۔ ٹک ٹاک کے بارے میں بھی خلیل الرحمان نے کہا کہ میں ان چیزوں پر بات نہیں کرنا چاہتا۔خلیل الرحمان قمر نے مستقبل میں سیاست میں آنے کے بارے میں کہا کہ مجھے نہیں پتہ اور وزیر اعظم عمران خان کو اپنا پسندیدہ سیاستدان قرار دیا۔

 

Sharing is caring!

Comments are closed.