مالکن کا خاوند ہونے کا دعویٰ

سعودی عرب: پاکستانی ڈرائیورنے اپنی مر-حومہ مالکن کا خاوند ہونے کا دعویٰ کر دیا
پاکستانی ڈرائیور نے عدالت میں موقف اختیار کیا ہے کہ وہ کروڑ پتی سعودی خاتون کا شوہر ہے، مر-حومہ کی دولت اور جائیداد اس کے حوالے کی جائے
ریاض(6 جنوری2021ء) سعودی عرب میں مقیم ایک پاکستانی ڈرائیور نے کچھ روز قبل و-فات پانے والی ایک امیر ترین سعودی خاتون کا خاوند ہونے کا دعویٰ کر ڈالا ہے۔ پاکستانی ڈرائیور نے مر-حومہ خاتون کی جائیدادلینے کے لیے عدالت میں مقد-مہ دائر کر دیا ہے۔ جس میں اس نے موقف اختیار کیا ہے کہ اس کی مر-نے والی خاتون سے شادی ہوئی تھی۔سعودی اخبار عکاظ کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر نے مر-حومہ کے خاوند ہونے کے دعوے کے ثبوت کے طور پر نکاح نامہ اور دیگر دستاویزات بھی پیش کر دی ہیں۔ پاکستانی ڈرائیور کا کہنا ہے کہ اس نے جدہ میں مقیم اپنی سابقہ کفیل خاتون سے کئی سال پہلے شادی کر رکھی تھی۔ اس کی و-فات کے بعد اس کی جائیداد فروخت کر کے تمام رقم اس کے حوالے کی جائے ۔

s

اس پاکستانی ڈرائیور کا نام ظاہر نہیں کیا گیا۔
تاہم اس کا کہنا ہے کہ اس نے کئی سال تک اپنی سعودی مالکن کی کفالت میں ڈرائیور کی ملازمت کی، پھر انہوں نے نکاح کر لیا اور وہ مالکن کے گھر میں ہی کئی سال رہائش پذیر رہا تاہم جب اس نے پاکستان میں ایک لڑکی سے شادی کی تو اس کی سعودی بیوی ناراض ہو گئی۔ آخر شدید اختلافات کے باعث اس نے الگ مقام پر رہنا شروع کر دیا مگر ان کا میاں بیوی کا رشتہ برقرار رہا ہے۔ تاہم اب سعودی بیوی کے انتقا-ل کے بعد اس کی جائیداد کا مالک وہی بنتا ہے۔ اسے یہ جائیداد منتقل کی جائے۔ تاہم سعودی مر-حومہ کے رشتہ داروں نے عدالت میں الزام عائد کیا کہ پاکستانی ڈرائیور نے ان کی بزنس مین بہن سے شادی کی تھی مگر اس شخص نے کبھی اپنی سعودی بیوی کا خیال نہیں رکھا نہ کبھی اس کی پرواہ کی۔ اس شخص کے غلط رویئے کی وجہ سے ہی سعودی خاتون کی صحت بگڑ گئی جو اس کی موت کا باعث بن گئی۔  رشتہ داروں کا کہنا تھا کہ وہ اپنی بہن کی موت کا ذمہ دار پاکستانی ڈرائیور کو ہی سمجھتے تھے اور اس پر ناروا سلوک کے حوالے سے جلد مقد-مہ چلوانے کا بھی ارادہ رکھتے ہیں اور وہ جلد ثبوت بھی پیش کر دیں گے۔ پاکستانی ڈرائیور نے مر-حومہ سعودی بیوی کے رشتہ داروں کے لگائے گئے الزامات کو جھوٹا قرار دیتے ہوئے اس کی جائیداد حوالے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *