اہم تبدیلی کر کے خوش خبری سُنا دی

متحدہ عرب امارات نے ویزہ پالیسی میں اہم تبدیلی کر کے خوش خبری سُنا دی
اب امارات میں زیر تعلیم غیر ملکی طلبا اپنے گھر والوں کو بھی سپانسر کر سکیں گے

ابوظبی(جنوری2021ء) متحدہ عرب امارات میں دی جانے والی تعلیم عالمی معیار کی ہے ، جس کی وجہ سے دُنیا بھر سے ہر سال ہزاروں نئے سٹوڈنٹس یہاں کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کرنے آتے ہیں ، تاہم بہت سے ایسے والدین جو اپنے بیٹوں اور بیٹیوں کے اکیلے رہنے کے حوالے سے فکر مند ہوتے ہیں، وہ خواہش کے باوجود انہیں امارات نہیں بھیج پاتے۔

beta

اب ایک ایسی شاندار خبر آ گئی ہے جس سے ان والدین کی فکر مندی دُور ہو گئی ہے۔ اماراتی حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ امارات میں زیر تعلیم غیر ملکی سٹوڈنٹس اب اپنے گھر والوں کو بھی سپانسر کر کے یہاں بُلا سکیں گے اور ان کے ساتھ قیام کر سکیں گے۔ اس فیصلے کی منظوری سال 2021ء کے اماراتی کابینہ کے پہلے اجلاس کے دوران دی گئی، جس کی صدارت یو اے ای کے صدر ، وزیر اعظم اور دُبئی کے فرمانروا شیخ محمد بن راشد المکتوم نے کی۔
کابینہ کی جانب سے فیصلہ کیا گیا کہ امارات میں مقیم تمام مرد اور خواتین سٹوڈنٹس کو اہم رعایت دی جا رہی ہے جس کے تحت وہ اپنے گھر والوں کو امارات میں قیام کے لیے سپانسر کر سکیں گے۔ تاہم اس کے لیے بنیادی شرط یہ ہے کہ اہل خانہ کو ساتھ رکھنے کے لیے مطلوبہ اخراجات کے لیے درکار رقم ہونا بھی ضروری ہو گی۔ شیخ راشد نے اس شاندار فیصلے ا علان کرتے ہوئے کہا کہ امارات تعلیمی شعبے میں خلیج کا ایک اہم ترین ملک ہیں جہاں پر 77اعلیٰ معیار کی یونیورسٹیاں ہیں جہاں لاکھوں مقامی اور غیر ملکی طلبہ تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔
انہوں نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہاکہ ہم اپنا کام اورمعیشت کی بحالی کے لیے کوشش اور اقدامات جاری رکھیں گے، سال 2021کے اختتام پر یو اے ای مزید طاقتور ملک بن کر سامنے آ ئے گا۔ہماری اولین ترجیح شعبہ صحت ہو گی تاکہ ہمارا بہترین مستقبل کی جانب سفر آگے بڑھ سکے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ امارات دُنیا کے سرگرم ترین ممالک میں سے ایک ہے۔اماراتی مملکت Soft Power کے عالمی سطح پر 11انڈیکیٹرز میں 18 واں درجہ حاصل کرچکی ہے۔ مستقبل میں امارات کی ریٹنگ مزید مستحکم ہو گی۔ کابینہ اجلاس کے دوران بینکنگ سیکٹر کی امداد کے لیے نئی قرضہ پالیسی کی بھی منظوری دی گئی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.